صوفیانہ کلام میں جداگانہ انداز رکھنے والے لوک گلوکار علن فقیرکی 19 ویں برسی

اندرون سندھ کے گاؤں آمری میں پید اہونے والے علن فقیر کا تعلق منگراچی قبیلےسے تھا۔ سندھ کے روایتی لباس میں ملبوس علن فقیر نے اپنی مخصوص گائیگی کے ذریعے صوفیانہ کلام کو نیا انداز دیا۔

علن فقیر کو گلوکارمحمد علی شہکی کے ساتھ گائے گئے گیت نے شہرت کی بلندیوں پر پہنچادیا۔ لطیفی راگ سن کر علن فقیر پر وجد طاری ہوجاتا تھا۔ انہوں نے صوفی بزرگ شاہ عبدالطیف کے مزار پر رہائش اختیارکرلی اور شاہ عبدالطیف کا کلام گانا شروع کردیا۔
حکومت نے علن فقیر کوصدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی سے نوازا، انہیں شاہ عبدالطیف، شہباز اور کندھ کوٹ ایوارڈز سے بھی نوازا گیا۔ علن فقیر علالت کے باعث 4 جولائی 2000 کو جہان فانی سے کوچ کرگئے۔

106 total views, 4 views today

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *